ورلڈ سکاؤٹس ڈے کے موقع پر سیاسی و سماجی رہنماؤں کا سائبر سکاؤٹس کے متعلق اظہار خیال

Image may contain: 1 person
Image may contain: 7 peopleImage may contain: 2 people, text

سائبرا سکاؤٹ کو سائبر جرائم کی نشاندہی کرنے کے لئے تربیت دی جاتی ہے اور اس سے نمٹنے کے لیے تعلیم دی جاتی ہے۔ وہ ورچوئل سوشلائزنگ سے وابستہ خطرات کو سمجھتا ہے اور وہ اپنے آس پاس کے ماحول میں سائبر سیفٹی کو فروغ دینے کے لئے کام کرتا ہے۔ سائبر اسکاؤٹس کا مقصد معاشرے میں رضا کارانہ طور پرسائبر کرائم کے بارے میں شعور اجاگر کرنا ہے۔ ان خیالات کا اظہار سائبر سکیورٹی آف پاکستا ن کے سائبرایکسپرٹ محمداسدالرحمن نے ورلڈ سکاؤٹ ڈے کے موقع پر میڈیا کو سائبرا سکاؤٹس کے متعلق گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر سابق چیئر مین ضلع کونسل شیخ دلشاد احمد قریشی، صوبہ بہاولپور اتحاد کی چیئر پرسن مسز آسیہ کامل، ای ایگریکلچر ساؤتھ پنجاب کے کوآرڈینیٹرپروفیسر ڈاکٹر مدحت کامل حسین،جنرل سیکرٹری ہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن ملک ایاز کلیار ایڈوکیٹ، میاں خالد اویسی، میاں زبیر محمود چنڑ، سٹی صدر پاکستان پیپلز پارٹی ملک بلال ڈھڈی اور بہاولپور کے دیگر سیاسی و سماجی رہنماؤں نے سائبر سکیورٹی آف پاکستان اور سائبرا سکاؤٹس کے اقدام کو سراہتے ہوئے کہا لوگوں میں جدید ٹیکنالوجی کے متعلق شعور اجاگر کر کے معاشرے میں بڑھتے ہوئے سائبر کرائمز پر قابو پایا جا سکتا ہے۔انہوں نے کہا کہ ایک سائبر اسکاؤٹ رضاکارانہ طور پر ساتھی طلباء، اساتذہ اور والدین میں سائبر بیداری پیدا کرنے کے لئے اہم کردار ادا کرتا ہے۔ پاکستان کی آدھی سے زیادہ آبادی نوجوانوں پر مشتمل ہے جو کہ ملک کی ترقی میں بہترین کردار ادا کرسکتے ہیں۔ وقت کی ضرورت ہے کہ پاکستان میں رضاکاروں کو اہمیت دی جائے تاکہ اس جذبے کو فروغ دیا جا سکے۔ اگر اس ملک کے نوجوان رضاکارانہ طور پر مختلف شعبوں میں اپنی خدمات دینے لگیں تو ملک کے بہت سے مسائل پر قابو پانے میں اپنا کردار ادا کر سکتے ہیں۔اس موقع پر انہوں نے بہاولپور کے سائبر سکاؤٹس شہروز اشرف، ہمایوں غنی، حمزہ ندیم،زید اسلم،طیب بھٹی، اظہر ملک، عبدالوہاب، اسداللہ، جنیدملک، محمد انیس، نوال مہدی، اعراف جبیں، نتاشہ ملک، فصیحہ منیر،سعدیہ مراد، عروج، نمرہ، حنا، عائشہ رزاق، علینہ و دیگر سے نیک تمناؤں کا اظہار کیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں