سائبر سکاؤٹس کی ٹریننگ اختتام کو پہنچی

15فروری : سائبر سکیورٹی آف پاکستان کی جانب سے سائبر سکاؤٹس کی ٹریننگ اختتام کو پہنچی۔ تفصیلات کے مطابق ملک میں بڑھتے ہوئے سائبر کرائمز پر قابو پانے اور سائبر سیفٹی کے فروغ کے لیے سائبر سکیورٹی آف پاکستان کی جانب سے سائبر سکاؤٹس کی آن لائن ٹریننگ کروائی گئی جس میں ملک بھر سے سرکاری و نجی اداروں اورطلباء و طالبات پر مشتمل 84اراکین کو سوشل میڈیا اکاؤنٹس کو محفوظ کرنے،آن لائن ڈیٹا چوری ہونے سے بچانے اور سائبر سکیورٹی کے متعلق تربیت دی گئی۔ چارروزہ ٹریننگ میں سائبر سکیورٹی آف پاکستان کے چیف ٹیکنالوجی آفیسر محمد اسد الرحمن اور سائبر ایکسپرٹ مبشر سرگانہ نے سائبر سکیورٹی اور انٹرنیٹ کے محفوظ استعمال کے متعلق،اسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور سائیکالوجی ڈپارٹمنٹ کے چیئر مین ڈاکٹر محمد سلیم نے سٹریس کاؤنسلنگ اور ریسکیو1122 سے ایمرجنسی میڈیکل ٹیکنیشن محمد ساجد جمیل نے فرسٹ ایڈ وہنگامی صورتحال سے نمٹنے کی تربیت دی۔ اس موقع پر سائبر ایکسپرٹ مبشر سرگانہ نے کہا کہ موجودہ دور میں سائبر سکیورٹی کی ضرورت و اہمیت میں اضافہ ہوتا جارہا ہے۔ڈیجیٹل سکیورٹی کے لیے ہمیں ملک بھر میں آگاہی مہم چلانے کی اشد ضرورت ہے۔ ٹریننگ کے دوران چیف ٹیکنالوجی آفیسر محمد اسد الرحمن نے سکاؤٹس کو لیکچر دیتے ہوئے کہا کہ اس رضاکارانہ ٹریننگ کا مقصد نوجوان نسل کوسائبر سکیورٹی اور جدید ٹیکنالوجی کے بڑھتے ہوئے خطرات اور محفوظ استعمال سے آگاہ کرنا اور ان کا مستقبل محفوظ بنانا ہے۔ اس ٹریننگ کے بعد سائبر سکاؤٹس ملک میں بڑھتے ہوئے سائبر کرائمز پر قابو پانے کے لیے اپنے گردو نواح میں سائبر سیفٹی کو فروغ دیں گے۔اسلامیہ یونیورسٹی سے سائیکالوجی ڈپارٹمنٹ کے چیئر مین ڈاکٹر محمد سلیم نے سائبر سکاؤٹس کو سٹریس کاؤنسلنگ کی ٹریننگ دی تا کہ وہ اپنے آپ کو ذہنی طور پر پر سکون رکھ سکیں اور سائبر کرائم کا شکار ہونے والوں کی بہتر طریقے سے کاؤنسلنگ کر سکیں۔ انہوں نے کہا کہ سائبر کرائم کا شکار ہونے والی خواتین زہنی دباؤ برداشت نہ کرنے کی وجہ سے خودکشی کی طرف مائل ہو جاتی ہیں لہذا سٹریس کاؤنسلنگ کا مقصد ان کے ذہنی دباؤ کو کم کرتے ہوئے انہیں پر سکون زندگی گزارنے میں مدد فراہم کرنا ہے۔ریسکیو 1122سے ایمرجنسی میڈیکل ٹیکنیشن محمد ساجد جمیل نے کہا کہ ملک میں بڑھتے ہوئے سائبر کرائمز پر قابو پانے کے لیے فرسٹ ایڈ کی طرح سائبر سکیورٹی کے متعلق آگاہی کی بھی اشد ضرورت ہے تا کہ جسمانی حفاظت کے علاوہ لوگ ڈیجیٹل طور پہ خود کو محفوظ رکھ سکیں۔ ٹریننگ کے اختتا م پر پاکستان کی سلامتی کے لیے دعا کی گئی اورسینکڑوں شرکاء میں سے منتخب ہونے والے سائبر سکاؤٹس سے آئین کی وفاداری کا حلف لیا گیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں